یہ شام کا باورچی لندن سے حلب میں زندگیاں بچا رہا ہے 🌯 🏥 ❤️

اماد الرناب Imad Alarnab کے لندن ریستوران میں جائیں تو آپ تابولے، ہمس، فلافل، بکلاوا اور مسالیدار چکن کابسا کی پلیٹوں کے ساتھ سجاوٹ کردہ خاندان کے لیے مختص میزیں دیکھیں گے:

6

اماد کو تمام ریسپیاں اس کی والدہ سے ملی ہیں ،اور , رستوران سے حاصل کر دہ تمام منافع حلب میں موجود بچوں کے ہسپتال کو جاتا ہے :

hospital-gif-for-fran

خیال بہت سادہ ہے: ایک فالافل کھائیں، ایک زندگی بچائیں!

اماد کے ریستوران کی مدد سے پہلے ہوپ ہسپتال، اپریل میں بند ہونے کے قریب تھا۔ ہسپتال میں ہر مہینے 5 ہزار سے زائد بچوں کا علاج ہوتا ہے، بشمول نومولود بچوں کے لیے انکیوبیٹر، 24 گھنٹے ہنگامی دیکھ بھال، حاملہ اور بچے کی پیدائش کے بعد خواتین کے لیے علاج، اور سرجیکل آپریشن۔

اچھی خبر ! ہمارے پاس اماد شامی ریستوران x چوز لاو سپر کلب جولائی کے لیے تھوڑی سی ٹکٹیں باقی بچی ہیں! میں نے اپنے دوستوں کی ایک helprefugeesuk@ ٹیم بنائی ہے تاکہ ہم حلب میں ہسپتال میں موجود بچوں کے لیے صرف اور صرف پیسے اکٹھے کر سکیں۔ 15£ پا ونڈ سے خریدے جانے والے ہر ایک ٹکٹ کے پیسے براہ راست ہوپ ہسپتال کو جاتے ہیں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ یہ ہسپتال چلتا رہے۔ ان تمام لوگوں کا بہت زیادہ شکریہ جو سپر کلب کا دورہ کر چکیں ہیں اور جنہوں نے ابھی تک عطیہ دیا ہے، آپکی سخاوت کی وجہ سے ہم ہوپ ہسپتال کے لیے 60 ہزار پاونڈ کی رقم اکٹھی کر چکے ہیں۔ ہم آپکو جلد دوبارہ ہمارے ریستوران پر دیکھنے کی امید کرتے ہیں ! ٹیکٹس کے لیے باِئیو میں لنک ہے۔ hope #hospital #chooselove #syria #aleppo#

اماد اکتوبر 2015 میں شام چھوڑنے کے بعد اپنی اور اپنے خاندان کی محفوظ زندگی کی تلاش میں لندن آیا تھا۔

ایک دن، دمشق وہ شہر نہیں ہے جسے ہم پہلے سے جانتے تھے۔ آپ اب بہت غمزدہ شہر رکھتے ہیں، جیسے وہ رو رہی ہے۔

اماد نے ترکی، یونان، پھر بلقان، آسٹریا، جرمنی اور فرانس کے راستے اپنا سفر طے کیا۔ کیلز، فرانس میں اماد اور اس کے ساتھیوں نے فی دن 64 دنوں کے لیے پکنک سٹول، ایک کٹورا اور ایک چاقو کے ساتھ — 50 سے زائد لوگوں کے لیے کھانا پکایا !

اسکے ایک اچھے دوست, جو دمشق سے ہے, نے اسکا راستے سے لے کر لندن باورچی خانے تک ساتھ دیا:

میں نے اور میرے سب سے اچھے دوست حسن آکاد hassanakkad@ نے دمشق سے لندن تک کا حیران کن سفر طے کیا۔ ہم نے کشتیوں سے پار کرنے اور ٹرکوں میں چھپنے سے لے کر مزا کیا اور کووینٹ گارڈن میں ایک ساتھ کھانا پکایا۔ یہ سب کچھ ناقابل یقین ہے۔ cookforsyria #friendship#

اماد کے یوکے آنے کے اک سال بعد، بالآخر وہ لندن میں اپنے خاندان کے ساتھ دوبارہ اکٹھا ہوگیا۔

میں نے ٹھیک 364 دنوں سے اپنے خاندان کو نہیں دیکھا۔

Screen-Shot-2018-07-10-at-5.37.58-PM

دمشق میں ہر چیز کو چھوڑنے کے عمل کے دوران جو اس کے پاس تھی، اماد نے وہاں تین ریستوران اور دو جوس بار بھی چھوڑیں۔

وہ اپنے جذبے کو دوبارہ حاصل کرنے میں تب کامیاب ہوا جب مختلف خیراتی اداروں نے اسکی لندن میں ایک پاپ-اپ ریستوران کھولنے میں مدد کی۔ ریستوران کھلنے کے صرف 24 گھنٹے بعد ،تمام 800 ٹکٹ بک گئے تھے۔

اماد چوز لو کیچن از اوپن! لندن میں سب سے بہترین شامی کھانا کھائیں اور حلب میں موجود واحد بچوں کے ہسپتال کے لیے پیسے اکٹھے کریں۔ میرا نیا ریستوران @helprefugeesuk اسی لیے ہے۔ ہر ایک ٹکٹ جو آپ خریدتے ہیں، ہم 15 £ ہوپ ہوپ ہسپتال کو بھیجتے ہیں، آج ہی اپنا ٹکٹ حاصل کرنے کے لیے نیچے بائیو میں موجود لنک دیکھیں!

پہلی مرتبہ جب میں نے یہ سائن دیکھا، 'Imad's Syrian Kitchen'،۔۔۔ میرا نہیں خیال کے میرے پاس وہ الفاظ موجود ہیں جن سے میں اپنے شاندار لمحات کا اظہار کر سکتا ہوں۔ آپ لندن میں ایسا محسوس کرتے ہیں جیسا کہ آپ کے پاس مستقبل کی امید ہو۔

یہاں تک کہ اس سال اماد نے ایک خاص مہمان کے لیے افطار کا کھانا بھی پکایا: لندن کے میئر صادق خان کے لیے!

موزئیک افطار 2018 مہمان خصوصی عزت ِ مآب موزئیک کے سفیر اور لندن مئیر صادق خان مہمانوں کے ساتھ ویسٹ منسٹر اکیڈمی میں منعقد کیا گیا تھا۔ مہمانوں میں شامل تھے موزئیک کے سپورٹرز، پترونز اور خاص مہمان۔ مثال کے طور پر، بشمول موزئیک بورڈ کے ممبران، بارونیس سیدہ واسی، نیک سٹیس - سی ای او پرنس ٹرسٹ، شبیر رینڈیری - چیرمین آف موزئیک، اسد احمد - بی بی سی پریزینٹر، امام محمد محمود - فینزبری پارک۔ @princestrust @mayorofldn @mosaicnetwork @nizcam @malikah_x

مقبول مطالبہ کی وجہ سے، اماد کے ریستوران نے افتتاح کو جاری ہی رکھا ہوا ہے.

اور آخر میں، وہ اپنے کھانے کو سب کے لئے دستیاب کرنا چاہتا ہے، بشمول ان لوگوں کے جن کے پاس خرچ کرنے کے لئے پیسے نہیں ہیں.

کئی سالوں سے یہ میرا خواب تھا۔ اس دن سے لے کر جب میں نے شام کو چھوڑا سے آج تک، میں اپنے پکوان سے لوگوں کو اکٹھا کر کے شام کے حقیقی مزے سے دوبالا کرنا چاہتا تھا۔ یہ ریستوران برطانیہ کے لوگوں کو کچھ واپس کرنے کے لیے ہے جنہوں نے مجھے خوش آمدید کہا؛ اور شامی لوگوں کے لیے ہے جنہیں اس وقت مدد کی بہت ضرورت ہے۔

روایتی شامی ناشتہ بہت سے ذائقہ اور رنگوں کا جشن ہے. یہ خوشگوار،مطمئن کرنا والا اور ایک خاندانی اثر آتا ہے. Syria #Damascus #syrianfood #foodie #food #breakfast#

تمام تصاویر اماد کے انسٹاگرام سے لی گئی ہیں، اسے یہاں فالو کریں 👉 Imadssyriankitchen@

مزید کہانیوں کے لیے ، ہمیں انسٹاگرام پر فالو کریں 👉 refugee.info@

اماد کو ایکشن میں دیکھیں 👇