پرتگال یونان سے 1،000 مہاجرین کو قبول کرے گا 🇬🇷 ✈️ 🇵🇹

یونانی وزیر ِداخلہ برائےمہاجرت پالیسی ڈیمٹریس ویٹسس (Dimitris Vitsas)نے کہا کہ پرتگال اور یونان نے یونان سے پرتگال میں 1000 مہاجرین کو منتقل کرنے کے لئے پچھلے ہفتے ایک معاہدے کو حتمی شکل دی ہے۔

پرتگال پروگرام ایک آزمائشی عمل کے ساتھ شروع ہو گا جہاں یونان سے صرف 100 مہاجرین کو قبول کیا جائے گا۔ ویٹسس کے فیس بک پیج کے مطابق، یہ پہلا گروہ بنیادی طور پر خاندانوں اور بیمار/کمزور (vulnerable) افراد پر مشتمل ہوگا جوکہ کیمپوں میں رہ رہے ہیں اور جنہیں سیاسی پناہ دی جا چکی ہے یا انکا سیاسی پناہ کا کیس ابھی چل رہا ہے۔

اگر یہ آزمائشی پروگرام ٹھیک چلتا ہے تو، پرتگال 2019 کے آخر میں 1،000 مہاجرین کو اپنے ہاں قبول کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

پرتگال کے وزیر داخلہ نے اپنے اک بیان میں اکتوبر میں کہا تھا ، اس پروگرام میں حصہ لینے کے لیے شرکا یا مہاجرین کو یونان میں پہلے سیاسی پناہ کی درخواست دینا لازمی ہے۔ اس بیان میں کہا گیا کہ، پرتگالی حکام اس پروگرام کے لیے اہل مہاجرین کا پھرانٹرویو کریں گے تاکہ وہ اس بات کا اندازہ لگا سکیں کہ انہیں سیاسی پناہ کا عمل مکمل کرنے کے لیے پرتگال منتقل کیا جائے یا نہیں۔

یہ ابھی تک واضح نہیں ہے کہ کن مہاجرین کا انتخاب کیا جائے گا، پہلی منتقلی/ ٹرانسفر کب سے شروع ہوجائے گی، اور آیا مہاجرین اس منتقلی کے منصوبے میں حصہ لینے کے لئے کہہ سکتے ہیں یا نہیں۔ جیسے ہی ہم معلومات حاصل کریں گے ہم آپ کو تازہ ترین معلومات کے ساتھ اپ ڈیٹ کریں گے ۔

یونانی وزیر برائے مہاجرت پالیسی اور پرتگال کے وزیر داخلہ نےسب سے پہلے اکتوبر 2018 میں اس پروگرام پر اتفاق کیا تھا۔ پھر انہوں نے جلد ہی یورپی کمیشن کو فنڈ کی درخواست کے لئے معاہدے کا ایک مسودہ پیش کیا۔

یہ ایک **** نیا، یورپ بھر میں منتقلی کا پروگرام نہیں ہے اور یونان اور پرتگال کے علاوہ کوئی بھی دوسرا ملک اس پروگرام میں حصہ نہیں لے رہا ہے۔

2016 اور 2017 کے درمیان ہونے والے منتقلی کے پروگرام میں پرتگال نے 1،192 مہاجرین کو یونان سے قبول کیا تھا۔

ہیڈر تصویر: Getty Images / Patrícia de Melo Moreira