جرمنی کچھ پناہ گزین کو واپس یونان میں بھیجنے اور خاندنی ملاپ کے عمل کو تیز کرنے کے لیے

ستمبر میں شروع ہونے والے، دونوں ممالک کے درمیان ایک نئے معاہدے کے مطابق، جرمنی آسٹریا کی سرحد پر کچھ پناہ گزین کو انکار کر سکتا ہے اور انہیں یونان واپس بھیج سکتا ہے۔

اچھی خبر: معاہدے میں جرمنی کے لیے خاندانی ملاپ کے منتظر افراد کی درخواست کا وقت بھی تیز کر دیا ہے۔

یہاں ہم اس معاہدے کے متعلق کیا جانتے ہیں اور یہ آپ کو کیسے متاثر کرسکتا ہے۔

وہ جنہیں یونان واپس بھیجا جا سکتا ہے؟

یہ معاہدہ ان لوگوں پر اثر انداز ہوتا ہے جو جرمنی-آسٹریا کی سرحد سے جرمنی داخل ہونے کی کوشش کرتے ہیں۔

کوئی بھی جو جرمن-آسٹرین سرحد پر کسی بھی بے ترتیب جانچ پڑتال/چیک کے دوران گرفتار کیا جاتاہے تو اسے یونان میں واپس بھیجا جا سکتا ہے اگر یہ تمام3 چیزیں درست ہیں :

وہ ستمبر 1، 2018 کو یا اس کے بعد سرحد پر گرفتار کیے گئے ہیں۔

انہوں نے 1 جولائی، 2017 کو یا اس کے بعد یونان میں سیاسی پناہ کی درخواست دی تھی۔

ان کے انگلیوں کے نشانات یورپین سنٹرل ڈیٹا بیس (Eurodac) میں موجود ہیں۔

وہ لوگ جو اوپر بیان کر دہ معیار پر پورا اترتے ہیں لیکن 18 سال سے کم عمر ہیں اور اکیلے سفر کر رہے ہیں انہیں واپس یونان نہیں بھیجا جاتا۔

عملی طور پر یہ معاہدہ کتنا کام کرے گا؟

یونانی اخبار (To Vima) کے مطابق، پناہ گزین کے سرحد پر گرفتار ہونے کے48گھنٹے بعد جرمنی انہیں صرف ہوائی جہاز کے ذریعے واپس ایتھنز میں بھیج سکتا ہے۔ جرمنی تمام اخراجات برداشت کرے گا بشمول، اس وقت سے لے کر جب جرمنی نے پناہ گزین کے داخلے سے انکار کیا اور اس وقت تک جب اسے واپس یونان نہیں بھیج دیا جاتا۔

جرمنی یونان کو ہر بھیجے جانے والے فرد کے متعلق ،ای میل یا فیکس، اور مندرجہ ذیل کی اطلاع دے گا:

یورو ڈیک (Eurodac) نمبر

جرمن-آسٹرین سرحد پر داخلے سےانکار یا گرفتاری کی تاریخ اور وقت

تصویر

ایتھنز کے لیے واپسی کی فلائٹ کی معلومات

یونان کے پاس 6 گھنٹے کی ڈیڈ لائن ہوگی جس کے بعد یونان اس واپسی کا انکار کر سکتا ہے اور اسے یہ ثابت کرنا ہوگا کہ یہ پناہ گزین ان شرائط پر پورا نہیں اترتا کہ اسے یونان میں واپس بھیجا جائے۔

اک دفعہ جب پناہ گزین واپس ایتھنز میں آ جاتا ہے، یونان کے پاس یہ ثابت کرنے کے لیے یہ پناہ گزین اس معیار پر پورا نہیں اترتا کہ اسے واپس یونان میں بھیجا جائے 7 دن ہوتے ہیں۔ اگر یونان یہ ثابت کرنے میں کامیاب ہو جاتا ہے، تو جرمنی بغیر کسی تاخیر کے اس واپس بھیجے گئے پناہ گزین کو قبول کرے گا. اس صورت میں، جرمنی دوبارہ اس پناہ گزین کےجرمنی میں داخلے کے اخراجات برداشت کرے گا۔

مزید برآں، 3 یونانی اور 3 جرمن نمائندے ایک وقف کمیٹی تشکیل دیں گےاور ہر 3ماہ میں معاہدے پر عمل کاجائزہ لینے کے لیے ملاقات کریں گے اور یہ فیصلہ کریں گے کہ آیا اس پر نظر ثانی کی ضرورت ہے۔

یونان اور جرمنی کے درمیان معاہدہ یہ ہے کہ وہ بین الاقوامی مذاکرات کے ذریعے کسی بھی مسئلے کو حل کریں گے۔

یہ معاہدہ کتنی دیر تک درست / کارآمدہے؟

یہ معاہدہ 3 ماہ کے وقت کے دوران خودکار طریقے سے منسوخ ہو سکتا ہےایک بار جب یورپی یونین پناہ گزینوں کے اصلاحاتی قوانین کو لاگو کرتا ہے ، جسے مشترکہ/کامن یورپین اسائلم سسٹم کہتے ہیں۔ یونان اور جرمنی کا اندازہ ہے کہ یہ 2018 کے آخر تک ختم ہو جائے گا۔ دونوں ممالک اک تحریری نوٹس کے ذریعے کم ازکم 3 ہفتے پہلے اس معاہدےپر عملدرآمد روکنے یا بند کرنے کا اختیار رکھتے ہیں۔

میں نے جرمنی میں سیاسی پناہ کی درخواست کی ہوئی ہے۔ کیا مجھے بھی واپس بھیج دیا جائے گا؟

نہیں، یہ معاہدہ صرف ان لوگوں پر لاگو ہوتا ہے جو جرمنی داخل ہونے کے لیے جرمن-آسٹرین سرحد عبور کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور جو اوپر بیان کر دہ معیار پر پورا اترتے ہیں۔

یونان اس کے بدلے کیا حاصل کرتاہے؟

بدلے میں، جرمنی یونان سے جرمنی کے لیے خاندانی ملاپ کےلہے مندرجہ ذیل اقدامات کے لیے رضامند ہے:

دسمبر کے اختتام تک، 1 اگست، 2018 سے پہلے2000خاندانی ملاپ کے لیے منظور شدہ کی منتقلی مکمل کی جائے۔

  • خاندانی ملاپ کی تمام درخواستوں کو پراسیس کرنا جو 1 اگست، 2018 سے پہلے منظور ہوئ ہیں۔

  • معاہدے کی عمل درآمد کی تاریخ سے 2 مہینوں کے اندر اندر تمام خاندانی ملاپ کے مقدمات کی جانچ پڑتال کرنا اور فیصلہ کرنا

2018 کے اختتام تک بر وقت اندازمیں تمام خاندانی ملاپ کے مقدمات کی دوبارہ جانچ پڑتال کرنا۔

ستمبر سے دسمبر 2018 کے آخر تک جرمنی ہر مہینے 600 لوگوں کو قبول کرنے کی توقع رکھتا ہے۔

کیا جرمنی اس جیسے معاہدے دوسرے ممالک کے ساتھ بھی کر رہا ہے؟

یونان اور جرمنی کے درمیان یہ معاہدہ جرمنی کے چانسلر انجیلا مرکل اور اسپین کے وزیر اعظم پیڈرو سنچیز(Pedro Sanchez)کےدرمیان اسی معاہدے کے بعد آیا ہے، جس کا آغاز اگست کے شروع میں ہوا تھا۔ جرمنی ابھی بھی اس طرح کے معاہدے کے لیے اٹلی کے ساتھ کوشش کر رہا ہے۔ تاہم، اٹلی کا وزیراعظم (Matteo Salvini) جرمنی سے پناہ گزین کو واپس لینے کا خواہاں نہیں ہے۔

جرمنی اب یہ معاہدے کیوں کر رہا ہے؟

اس معاہدہ کی وجہ جرمن جانسلر انجیلا میرکل اور اسکے وزیر داخلہ(Horst Seehofer)کےدرمیان پناہ گزین کی واپسی پر پایا جانے والا تنازع ہے، اس تنازع نے حکومتی اتحاد کو تقسیم کرنے اور حکومت کو گرانے کی دھمکی دی ہے۔