زمینی سرحد کے ذریعے کراسنگ: خطرات کیا ہیں؟

یونان اور ترکی کے درمیان زمینی سرحد پر پناہ گزینوں کے لئے بہت سے خطرات، خاص طور پر موسم سرما کے وقت کے دوران۔ حالیہ مہینوں میں، ہمیں ان لوگوں سے کئی شکایات ملی ہے جنہیں یونان کے شمال مشرقی علاقے ایوروس کو پار کرنے کی کوشش کرتے ہوئے واپس دھکیلنے کا سامنا کرنا پڑا، اس میں یہ بھی شامل ہے:

“انہوں نے تمام مردوں کو اپنے تمام پیسے اور موبائل فون دینے کے لئے مجبور کیا. مردوں کو اپنے کپڑے اتارنے کے لئے بھی مجبور کیا گیا اور کچھ کو ان کے زیر جامہ اتارنے اور رات کے وسط میں، دریا میں تیرتے ہوئے ترکی کے ساحل پر واپس جانے کے لیے مجبور کیا گیا۔ تمام خواتین اور بچوں کو صرف لوٹا گیا اور کشتی کے زریعے واپس لوٹا دیا گیا.

پیغام کے مطابق، پناہ گزینوں کے اس گروپ کو پولیس نے گرفتار کیا اور 4 دن تک بند رکھنے کے بعد یونانی فوج کی جانب سے ترکی واپس بھیج دیا۔

Evros-Blog_UNHCR-Socrates-Baltagiannis_Jan-2019-1

اس طرح کی رپورٹس کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے کیونکہ پچھلے سال زیادہ سے زیادہ لوگ زمین کے زریعے سرحد پار کررہے ہیں۔ اپریل 2018 میں ایوروس کے علاقے میں آنے والے لوگوں میں بے پناہ اضافہ ہوا جب 3،600 سے زیادہ پناہ گزینوں نے ایوروس دریا (ترکی میں مرک بھی کہلاتا ہے) پار کیا۔ یونان میں، یو این ایچ سی آر کی رپورٹ کے مطابق 1، 2013 سے پہلے یہ پہلی بار تھا کہ ایجین جزیرے پر زمین سے آنے والوں کی تعداد سمندر سے آنے والوں سے بڑھ گئی

UNHCR کی طرف سے جمع کردہ سب سے حالیہ اعداد و شمار کے مطابق، 2018 میں ایوروس آنے والی مجموعی تعداد 2017 کے مقابلے میں تین گناہ سے زائد ہے. 2017 میں تخمینہ شدہ 5،600 کے مقابلے میں 2018 میں 18،000 سے زائد پناہ گزین زمین کے زریعے آئے۔

Evros_Refugee.Info_July-2018-1

لوگ ایوروس کے زریعے زمینی سرحد کیوں پار کر رہے ہیں؟

ایوروس کے ذریعے حال ہی میں پار کرنے والے بہت سے لوگ اس راستہ کو یونانی جزائر کے ذریعے جانے کے متبادل کے طور پر دیکھتے ہیں، جہاں یورپی یونین - ترکی ڈیل اور جغرافیایی پابندیوں کے نتیجے میں پناہ گزینوں کو بڑی مشکلات کا سامنا ہے.

مارچ 2016 میں دستخط ہونے والے یورپی یونین اور ترکی کے درمیان معاہدہ کا مقصد یونانی جزائر پر پہنچنے والے ان افراد کو ترکی واپس بھیجنے کا تھا جو یونان میں پناہ گزینی حاصل کرنے کی اہلیت نہیں رکھتے۔ یہ فاسٹ ٹریک بارڈر پروسیسنگ کا نایک خاص عمل ہے۔ عملی طور پر، اس طریقہ کار میں لمبا عرصہ لگتا ہے اور بہت سے کیس ابھی بھی زیر التواء ہیں.

معاہدے کے نتیجے کے طور پر، جو لوگ یونانی جزائر پر پہنچتے ہیں انہیں اپنے پناہ کے کیس پر عمل درآمد ہونے سے قبل جزیرہ چھوڑنے کی اجازت نہیں ہوتی، جس میں کچھ مہینے یا بہت سے کیس میں کئی سال بھی لگ سکتے ہیں۔

پناہ گزین جو زمین کی سرحد کے ذریعے پہنچتے ہیں اور انہیں پولیس کی طرف سے گرفتار کر لیا جاتا ہے انہیں حراست میں رکھا جاتا ہے. کیونکہ وہ یورپی یونین - ترکی کے ڈیل کے تحت نہیں آتے، ان ممالک کے لوگ جہاں پناہ گزینی کی کامیابی کی شررہ زیادہ ہے، انہیں کافی جلدی چھوڑ دیا جاتا ہے اور ملک میں آزادانہ پھرنے کی اجازت دے دی جاتی ہے۔

اقوام متحدہ نے بتایا کہ 2018 کے موسم بہار میں زمین کی سرحد کے ذریعے پہنچنے والی اکثریت شمالی شام کے شہر آفرین کے کردوں کی تھی، اس کے علاوہ افغانستان ، شام، عراق اور دیگر شام کے علاقوں سے آنے والے لوگ تھے۔

Evros-July-2018_for-Evros-Blog_Tolis_Refugee.Info-1

یونان میں ترکی سے زمین کی سرحد کو پار کرنے کے خطرات کے بارے میں مزید پڑھیں:

اگر آپ کے پاس زمین کی سرحد کے حالات کے بارے میں مزید سوالات ہیں تو، براہ کرم فیس بک پر ہمیں پیغام بھیجنے میں ہچکچاہٹ نہ کریں۔ ہم پوری کوشش کریں گے کہ آپ کو جلد از جلد جواب دیں.

کور فوٹو: اوریسٹس سیفیروگلو (Orestis Seferoglou) (تصویر کے رنگ میں کچھ ردوبدل کیا گیا ہے)